• August 22, 2022

چین نے روسی تیل کی درآمدات میں اضافہ کر دیا

بیجنگ: چین نے روسی تیل کی درآمدات میں اضافہ کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چین نے روسی توانائی کی درآمدات میں اضافہ کر دیا ہے، یورپی ممالک کی جانب سے روسی گیس پر انحصار محدود کرنے کی کوششوں کے درمیان چین اور روس کے درمیان تجارتی تعلقات مزید فروغ پا رہے ہیں۔

رپورٹس کے مطابق چین روس سے توانائی کی بڑی مقدار درآمد کر رہا ہے، مسلسل تیسرے ماہ کے دوران بھی روس چین کے لیے تیل کا سب سے بڑا سپلائر ہے۔

جولائی میں چین نے کل 7.15 ملین ٹن روسی تیل درآمد کیا جو کہ گزشتہ سالوں کے مقابلے میں 7.6 فی صد زیادہ ہے۔

چین کی روس سے کوئلے کی درآمدات جولائی میں 7.42 ملین ٹن کے ساتھ پانچ سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں، جو پچھلے سال کے اسی مہینے کے مقابلے میں تقریباً 14 فی صد زیادہ ہیں۔

دوسری جانب یورپی یونین تقریباً 6 ماہ قبل شروع ہونے والی روس یوکرین جنگ کے بعد سے روسی توانائی کی سپلائی پر انحصار کم کرنے کی کوشش کر رہی ہے، ایسے میں چین روس سے اشیا کی قیمتوں میں رعایت کا فائدہ اٹھا رہا ہے۔

واضح رہے کہ بیجنگ نے اب تک یوکرین میں روس کی جنگ کی مذمت نہیں کی ہے، چینی حکومت کی جانب سے کئی مواقع پر روس کو حمایت کی یقین دہانی بھی کروائی گئی ہے۔

چینی و روسی سربراہان کے درمیان ہونے والی ٹیلی فونک گفتگو میں چین کی جانب سے بنیادی مفادات، خود مختاری اور سلامتی جیسے خدشات سے متعلق امور پر روس کو باہمی تعاون کی پیش کش جاری رکھنے کا وعدہ کیا گیا تھا۔

اس حمایت کے اعلان کے بعد کریملن سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا کہ دونوں رہنماؤں نے مغرب کی غیر قانونی پابندیوں کی پالیسی کی وجہ سے عالمی معیشت کی صورت حال کو مدنظر رکھتے ہوئے توانائی، مالیاتی، صنعتی، ٹرانسپورٹ اور دیگر شعبوں میں تعاون کو وسعت دینے پر بھی اتفاق کیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.